Archive for the ‘Poetry’ Category

Zaat

April 22, 2011

fikar apni zaat ki jaati nahain
dost dost na raha koi saathi nahain

baat itni bhi nahain koi mil na sakay
bus baat itni see hai koi raazi nahain

hain hum alag say juda say tu kya
bus daes apnay mein koi aesa dasi nahain

lakh arman lay kar phirtay raho yar
jab koi rooh itni bhi peasie nahain

yeh na kaho hamain dhang nahain wo rung nahain
ik dil hee tu hai masoom sa;hai phir bhi koi raazi nahain

phoonk phoonk kar qadam rakhatay rahay
shauq itna bhi na ho kay raha kuch baqi nahain

hain akaylay say majboor say masroor say
ab itna bhi kya; koi pyar ka bheykari nahain

Creative Commons License
Zaat by Rehan Munir is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.

ناخوش

April 8, 2011

ہے کسی کو غم غریبی کا، اور کسی سے امیری سمبھالی نہیں جاتی

ہے کسی کو شکوہ چشم-ی-دید نہ ہونے کا، اور کسی سے نظر سمبھالی نہیں جاتی

ہے کسی کو اداسی تنہائی سے، اور کسی سے محفل سجائی نہیں جاتی

کچھ ہے کچھ نہیں ہے تو کیا، آئے آدم تیری ذات میں دنیا سمائی نہیں جاتی

Creative Commons License
Na-khush by Rehan Munir is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.

خواہش

April 8, 2011

تھوڑا پانی تھوڑی ہوا بھی چاہیے
ایک تتلی ایک چڑیا بھی چاہیے

سوچ کے ساتھہ تدبیر بھی چاہیے
تھوڑا خواب تھوڑی تعبیر بھی چاہیے

سبب زندگی کا اور جواز موت کا بھی چاہیے
کوئی خیال کوئی آواز کوئی ساز بھی چاہیے

فقط اتنا ہی نہیں ایک زندگی اور بھی چاہیے
اپنا رنگ اپنا آسمان اپنی بدلی بھی چاہیے

کوئی گوشہ -ی-خاموش سا کونہ بھی چاہیے
صرف اپنے لئے نہیں سب کے لئے انصاف بھی چاہیے

اور اگر ہو سکے تو پیاس بوجھانےکو اک قطرہ بھی چاہیے
کوئی پتھر اٹھا لے اسس سے پہلے پاکیزگی بھی چاہیے

کوئی راگ بلبل کا کوئی انداز مور کا
کوئی ناچ کوئی ڈھنگ بھی چاہیے

اتنا ہی نہیں تیری قائنات سے
اپنے وجود کی قبولیت بھی چاہیے

2 July 2010

gentleman

October 23, 2010

تپتی ریت پر پاؤں رکھا نہیں جاتا , اتنی گرمی میں رہا نہیں جاتا
کون کہتا ہے snow storm ہے آ رہا , مجھ سے یہ جھوٹ سہا نہیں جاتا

پتا نہیں لوگ کیسے دیتے ہیں گالیاں , اررے مجھ سے تو الو-کا- پٹھہ بھی کہا نہیں جاتا
بڑے شوق سے بنایا میں نے chocolate cake , اتنا tasty کے خود سے بھی کھایا نہیں جاتا

ابے تم کون ہو میں کون ہوں بتاو ذرا , مجھ سے تو اپنا نام بھی یاد رکھا نہیں جاتا
یہ UML, ejb, design pattern, aur iphone sdk; کیا کرتے ہو بات , مجھ سے تو ‘Hello world’ بھی لکھا نہیں جاتا

اور اتنے ظالم کیوں ہو مارے ساتھ , اررے بھی اتنا ترس تو مجھے اپنے پر بھی نہیں جاتا
جان چھوڑاتے ہیں کیوں مجھ سے سب , اتنا بھی کیا کے ایک شعر بھی سنا نہیں جاتا

ارے نہ ہم فرشتے اور نہ ہی کوئی gentleman ہیں , بس اب اتنا بھی شریف بنا نہیں جاتا
لکھنے کو تو بہت کچھ لکھ دیں , پر اتنا بھی بد -تمیز ہوا نہیں جاتا

خبر ہے ہم کو یہ بات جو لکھ دی بری ہے , اسے mental torture بھی تو کہا نہیں
گلوکاروں اور شاعروں کو سلام ہے میرے ; سناتے ہیں سب کو , ہم نہیں وو کے اتنا بھی ڈھیٹ مجھ سے بنا نہیں جاتا

معلوم ہے کے آمد ہو رہی ہے شعروں کی ریحان
کو بھرا نہیں جاتا facebook کی feed پر یار اسطرح بھی

کچھ اسے کچھ ویسے کہ دیا ہم نے جو کہنا تھا , کے باز -اوقات سیدھے لفظوں میں کچھ کہا نہیں جاتا
ارے سنا ہے کے لوگ کہتے ہیں ہم پاگل ہیں , ارے بھی پاگلوں کو کبھی پاگل کہا نہیں جاتا

اور یہ جام پی لیا ہے ہم نے اب , اس کا نشہ بھی تو بنا کچھ کہے ا تا را نہیں جاتا
اور ملنگ کیا سا ییں بابا کیا ; کیا جانتے ہو تم , کچھ کھوے بغیر ایسا بنا نہیں جاتا

اور ہاں بڑے مصروف ہیں ہم ہر وقت
یہ مت سمجھنا کے ہم سے شعاری کے علاوہ کچھ کیا نہیں جاتا

اعتبار

October 22, 2010

جاؤ کے اب ہمیں انتظار نہیں بہار کا
نہ ہی کوئی مرہم -سبب رہا دل – بے قرار کا

وہ جوتشی دھوکے باز کسی اور ہی دیار کا
کے جس کی بات کا ہمیں برا اعتبار تھا

اور نہ کہو کے میں خود کا ہی قصور-وار تھا
ورنہ یہ جو اک بھرم کے ہوں خود کا ہمدرد ; وہ بھی بیکار تھا

ویسے کسی کے کہنے میں کہاں آتا یہ دل تھا
بڑے ہی غلط وقت پر رکھا بھرم اس یار کا

بڑی کہانی سناتے ہو ریحان کے جیسے تم جیسا کہاں کوئی انسان تھا
ہے ہمیں سب معلوم تمھارے چوپے کردار کا

لگے ہو سنانے یہ داستان جو وہ بھی کیا انداز تھا
لگا ہمیں کے جیسے سارا قصور تھا صرف اسی اک ذات کا

اور کر دو بس یہ یہ وہ وہ کر کے حال سنانے کا
کے تنگ آ گئے ہیں ہم کے پیالہ لبریز ہوا اپنی بھی برداشت کا

تھا جو بھی وہ ہے جو بھی یہ ; کر کے جتن دیکھا ہر بات کا
اب کیا کہتے ہو یار کیا چاہتے ہو ; کے کیا فایدہ اس بات کا

حقیقت سے بھاگ کر جو بنے رہے اک پھول گلاب کا
یہ بڑے دھوکے میں جو رکھا بڑا ہی جو ٹوٹنے کا خیال تھا

ہے امید کی پھر سے ; نہ کرنا اعتبار اس ہوا کا
کے ہمیں تو خیال ہے پھر اس بہتے ذرا – ا -اشکبار کا

نہ بنو اتنے بھی بھولے سے ; کیا حاصل اس نقاب کا
کے جواب دہ ہونا ہے بس تمہیں اپنے ہی رب کی ذات کا

Reasons of Silence

September 20, 2010
Silent dreams Silent wishes
here and there my passions

figuring out reasons out of no-reason
walking through the shadows of pain

forced to hope out of every despair
looking into others happiness to rescue me

shaded with tinged grace
yet forced to believe in

a thread from beginning to end
existed through all the gusts

no where seems to be my own world
its my wasted away, rusted away, expired version

even though masking morphed existence
uttered each alphabet yet no empathy

hidden selfish visionary; out of worldly cloud
belonging to myself yet belong to no one

neither sky neither space can hold
such an unworthy wreckage

mocked robbed polluted shattered
yet have to take in all breaths

no one can see beyond the vision of blind
yet believe we got eyes

haunted by chanted winds
still got rotten

complaining heaven endlessly
yet fallen short of glory

teach me only; the way you like
first take my soul inside of you

stepping out to dispute the realm
back to the whispers of my comfort zone

even then even then
no heart no ear no eye no thoughtfulness

__________________________________________

RyanWyan
Friday, September 17, 2010

Creative Commons License
Reasons of Silence by Rehan Munir (RyanWyan) is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.

Confession

December 13, 2007

Confession June 2002
{chorus}
I am feeling sorry
I know God I am sinner
In your grace I’ll be saved
I know God you only love me
{chorus}

My heart full of lust, ever bad dead
I walked against your will
I followed my own will
People are judging me, in their eyes hatred for me
Why are they judging me when they are to be judged by you?

[Chorus]

My heart is crying, I know I am frail
My eyes are not pure, my body is not pure
No one is sincere, I am in despair
No one loves me, I need your care

[Chorus]

Tabeer

December 13, 2007

Tabeer 27 April 2005

Tabeer

Creative Commons License
Aitbaar by Rehan Munir is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.

Empathy

December 13, 2007

Empathy June 2005


Long ago on my way to home
I met an angel with a crown

His face was pure and I fell down
I was speechless and just like a stone

Then angel smiled and I felt peace
I cried a lot and asked for help

But then I thought angel cannot be empathetic
And I was true he was sympathetic

I asked in wrath to angel why you are here
I prayed to God to send my late Mom

And why he sent an angel who can’t understand me
How can an angel counsel me the way my Mom did

Creative Commons License
Empathy by Rehan Munir is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.

Hobson’s Choice

December 13, 2007

Hobson’s Choice May 2005


Life is more worse than you can think of it
And there is no escape unless you taste of it

I was hopeful of good in life but
I lost my passion when I was hurt

I delved in life to find delight
But then I realized its fruitless sought

Life sometimes dazzled us by its light
And these are delusions of our sight

Life was hobson’s choice for me to select
And even then it has no regret

Life is a certain je ne sais quois I thought
And whatever was worst it brought

Life is a deluge and I have no life-boat
All I have to do is, follow its rough route

hobson’s choice = The choice of taking what is offered or nothing at all
je ne sais quois= Something indescribable of high quality

Creative Commons License
Hobson's Choice by Rehan Munir is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.

ME

December 13, 2007

Me APRIL 2006


Have I been so brilliant?
And have I been so strong?
That makes me to think of it
That makes me so wrong
But I never been to there
And that makes me alone
And how then I feel so high in me?
And why I think been drawn?
No reason no specialty and no even a star
But how I feel inside of me someone holding on?

Creative Commons License
Me by Rehan Munir is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.

Simply

December 13, 2007

Simply -01 DEC 2006

Moving in a circle of mine
And think all of me is divine

Oh this fallacy I enshrine
still its like a star to shine

But why you are saying its crime
when all of us live in such a sign

We are playing hoopla all the time
to lose or win and think winning is all mine

Look everything is not E=mc² done by Einstein
May be simply done with love of thine

sign = A gesture that is part of a sign language
sign language= Language expressed by visible hand gestures
hoopla= [Brit] Game in which a ring is thown to fall over an object and win it as a prize

Creative Commons License
Simply by Rehan Munir is licensed under a Creative Commons Attribution-NonCommercial-NoDerivs 3.0 Unported License.