خواہش

تھوڑا پانی تھوڑی ہوا بھی چاہیے
ایک تتلی ایک چڑیا بھی چاہیے

سوچ کے ساتھہ تدبیر بھی چاہیے
تھوڑا خواب تھوڑی تعبیر بھی چاہیے

سبب زندگی کا اور جواز موت کا بھی چاہیے
کوئی خیال کوئی آواز کوئی ساز بھی چاہیے

فقط اتنا ہی نہیں ایک زندگی اور بھی چاہیے
اپنا رنگ اپنا آسمان اپنی بدلی بھی چاہیے

کوئی گوشہ -ی-خاموش سا کونہ بھی چاہیے
صرف اپنے لئے نہیں سب کے لئے انصاف بھی چاہیے

اور اگر ہو سکے تو پیاس بوجھانےکو اک قطرہ بھی چاہیے
کوئی پتھر اٹھا لے اسس سے پہلے پاکیزگی بھی چاہیے

کوئی راگ بلبل کا کوئی انداز مور کا
کوئی ناچ کوئی ڈھنگ بھی چاہیے

اتنا ہی نہیں تیری قائنات سے
اپنے وجود کی قبولیت بھی چاہیے

2 July 2010

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s


%d bloggers like this: